Besides revolutionizing communication, business  and entertainment, internet is also growing as a rich library. With one click  of mouse it allows the operator to get free excess to thousands of books on  variety of subjects. But as we know internet has no intellect, which makes  human beings superior and more powerful than machines. It has no ability to  distinguish right from wrong and good from evil. So it is up to the reader to  decide which book or website to read and what material is healthy or poisonous  for his beliefs.

At present, the use of internet has increased.  It is so common and popular now that a very few people bother themselves to go  to library and read books, while the majority prefer to quench their thirst of  knowledge by browsing online books and libraries.

Given the popularity of internet, some anti  Islamic elements manipulate it for their vested interests. New  websites with Islamic names are launched regularly posting wrong  information or misinterpreting the Islamic teachings to misguide common people  who do not know much about Islam. On the other hand some people of our own  Muslim community have started criticizing Hazrat Imam Abu Hanifa RA (80H-150H) and objecting to many masa'il that he derived from Qur'an and Hadith.

This website basically has been created for the  following purposes. I hope from Allah to accept this effort and make it useful  for the readers.

1. To present my articles on various topics in  categorized way, so that the readers can easily read or download them.

2. To form an electronic library where we can  upload thousands of Islamic books making it easily accessible to the readers.

3. 80% of the practical issues have been clearly  mentioned in the Quran & Hadeeth and all scholars are agreed on them. There  are only 20% of the practical issues on which scholars differ from each other.  So this website will provide a comparative study of the opinions of different  scholars and present concrete evidences in the light of Quran & Hadeeth  showing why the opinion of Hazrat Imam Abu Hanifa (RA) is preferable.

4. To highlight the contribution of Ulama of  subcontinent made for Qur'an and Hadith.

5. A considerable number of Urdu speaking people  who live abroad do not have access to books of their authentic Ulama. This  website will provide them reliable books and articles of their Ulama in Urdu,  Arabic& English languages that will enrich their knowledge.

6. Sambhal, a small town in India, is a historical  place. It produced a large number of Islamic scholars who made lots of valuable  contribution for Qur'an and Hadith. But unfortunately their works have not been  appreciated at large level. Some of the books regarding Sambhal are available,  but they only describe the historical aspect of the town. We have dedicated a  separate column in this website to highlight the academic services of Ulama of  Sambhal.

 

رَبَّنَا تَقَبَّلْ مِنَّا إِنَّكَ أَنْتَ السَّمِيعُ الْعَلِيمُ وَتُبْ عَلَيْنَا إِنَّكَ أَنْتَ التَّوَّابُ الرَّحِيم

Mohammad Najeeb Sambhali Qasmi

ٹکنالوجی کی ترقی کے ساتھ انٹرنیٹ کا استعمال بھی روز  بروز عام ہوتا جارہا ہے ۔ اس کی مقبولیت اس قدر بڑھتی جارہی ہے کہ اب تعلیم یافتہ  لوگوں کا بڑا طبقہ لائبریریوں کا چکر لگانے اور ضخیم کتابوں کا مطالعہ کرنے کے  بجائے انٹرنیٹ پر آن لائن کتابیں اور رسائل پڑھنے کو ترجیح دیتا ہے۔

  انٹرنیٹ کی مقبولیت کے پیش نظر بعض غیر اسلامی طاقتوں نے، جن کا اصل مقصد اسلامی  تعلیمات کو توڑمروڑ کر پیش کر نا ہے، انٹرنیٹ کو اپنے غلط مقاصد کے لئے استعمال  کرنا شروع کردیا ہے، چنانچہ اسلامی ناموں سے ویب سائٹس تیار کرکے ان پر غیر اسلامی  مواد پوسٹ کئے جارہے ہیں یا اسلام کی غلط ترجمانی کی جارہی ہے ۔ 

  مزید یہ کہ موجودہ دور میں مسلمانوں ہی کے ایک مکتب فکر نے ۸۰ہجری  میں پیدا ہوئے مشہور ومعروف فقیہ ومحدث حضرت امام ابوحنیفہ رحمۃ اللہ علیہ کی قرآن  وحدیث فہمی کو اس طرح نشانہ بنانا شروع کردیا کہ معلوم ہوتا ہے کہ ۱۴۰۰  ہجری میں ان کے مکتب فکر ہی نے قرآن وحدیث کو صحیح سمجھا ہے اور حضرت امام  ابوحنیفہ رحمۃ اللہ علیہ ، ان کے شاگرد وعلماء احناف نے قرآن وحدیث کو سمجھنے میں  غلطی کی ہے۔

  لہذا مندرجہ ذیل مقاصد کو سامنے رکھتے ہوئے اس ویب سائٹ کو تیار کیا ہے ، اللہ  تعالیٰ اس کاوش کو قبول فرمائے اور قارئین کے لئے مفید بنائے ۔

(۱) میں نے مختلف موضوعات پر اصلاحی مضامین تحریر کئے ہیں جنہیں وقتاً وفوقتاًایمیل کے  ذریعے قارئین تک پہونچایا جاچکا ہے، اس ویب سائٹ پران تمام مضامین کو منظم شکل میں  جمع کر دیا ہے تاکہ قارئین جب چاہیں بآسانی استفادہ کرسکیں ۔ (۲) ایک ایسی آن لائن اسلامی لائبریری بنائی جائے جہاں ہزاروں کتابیں مہیا ہوں تاکہ  قارئین جب چاہیں ان کتابوں کو ڈاؤن لوڈکرکے پڑھ سکیں۔ (۳) ۸۰فیصد عملی مسائل قرآن و حدیث میں واضح طور پر  بیان کردئے گئے ہیں اور ان مسائل میں اختلاف یا شبہ کی گنجائش بھی نہیں ہے البتہ ۲۰فیصد  عملی مسائل میں علماء کرام کا اختلاف ہے ۔اس ویب سائٹ کا مقصد ان مختلف فیہ مسائل  میں علماء کے آراء کو عام لوگوں تک پہونچانا اور قرآن وحدیث کی روشنی میں حضرت  امام ابوحنیفہ رحمۃ اللہ علیہ کی رائے کو ترجیح دینا ہے ۔ (۴) برصغیر کے علماء کرام کے ذریعہ کی گئی قرآن وحدیث کی علمی خدمات کو منظر عام پر  لانا ہے۔ (۵) اردو بولنے والوں کا ایک قابل ذکر طبقہ بیرون ممالک میں مقیم ہے لیکن ان کے پاس  ایسے اسباب فراہم نہیں ہیں کہ وہ آسانی سے اپنے معتمد علماء کی کتابیں پڑھ سکیں ،  اپنی لاعلمی یا کم علمی کی وجہ سے وہ علاقائی طور طریقے سے متأثر ہو جاتے ہیں ، اس  ویب سائٹ کے ذریعہ ہماری کوشش یہ بھی ہے کہ ان تک ان کے معتمد علماء کی کتابیں اور  رسائل پہونچائے جائیں ۔ (۶) سنبھل کو ایک تاریخی اور علمی شہر ہونے کے باوجود تاریخ میں وہ حصہ نہیں ملا جس کا  وہ مستحق ہے۔ اس شہر میں بہت سے جید علماء اور محدثین پیدا ہوئے جنہوں نے قرآن  وحدیث کی بیش بہا خدمات انجام دیں۔ اس ویب سائٹ کے ذریعہ سنبھل شہر کے علماء کرام  کی خدمات کو لوگوں کے سامنے لانا بھی ہے ۔

  محمد نجیب سنبھلی قاسمی