Introduction:

Mohammad Najeeb Sambhali Qasmi is an alumnus of Darul Uloom Deoband and Jamia Millia Islamia, New Delhi. Beside hundreds of short Islamic articles that he keeps contributing to various websites, daily newspapers and monthly magazines, he has authored so far 6 books in Urdu: Hajj-e-Mabroorحج مبرور , Hayya Alas Salahحي على الصلاة, Islahi Mazaaminإصلاحي مضامين, Mukhtasar Hajj Mabroor, Tohfae Ramazul Mubarak, Maloomate Quran & Umrah Ka Tariqah. These books have been hugely acclaimed by the people and gone into several editions. He also organizes Hajj Orientation programme once in a year to provide accurate guidance for the pilgrims.

 

Family back ground:

He belongs to an educated family in Sambhal, Muradabad, UP, India. His grandfather Maulana Mohammad Ismail Sambhali was a freedom fighter and renowned scholar of Hadith. He taughtBukhari for 17 years in different institutes of India, whereas his maternal grandfather Mufti Musharraf Hussain worked in various madaris in India as chief Mufti and Muhaddith.

 

Maulana Mohammad Ismail Sambhali:

Late Maulana Mohammad Ismail was considered one of the most popular scholars of his time. He was not only a scholar but a freedom fighter who bore the hardships of jail for about five years for the freedom of our country. He fought the election twice as a representative of freedom loving organization against the loyalists of British and achieved grand success in these elections held in 1934 & 1946. He taught Quran, Hadith & Fiqh etc. for over forty years. He was a great orator and enjoyed the title of Raeesul Muqarrereen. He worked as the General Secretary of Jamiat Ulema-e-Hind. “Taquleed-e-Aimma”, “Akhbarul Tanzeel” (the Quranic prophesies) and “Maqamat-e-Tasawwuf” are some important books authored by him.

 

Education:

After completing Islamic studies and theology at Darul Uloom Deoband in 1994, Mohammad Najeeb Qasmi joined Jamia Millia Islamia University (JMI), New Delhi where he did graduation in Arabic and two courses of translation (Arabic into Eng & Vice Versa). He also completed MA in Arabic from Delhi University (DU).

Dr. Mohammad Najeeb Qasmi has been awarded the Degree of Doctor of Philosophy from Jamia Millia Islamia for his valuable research onالجوانب الأدبية والبلاغية والجمالية في الحديث النبوي من الصحيحين البخاري ومسلم(Literary, Rhetorical and Aesthetical Aspects in the Ahadith of Al-Bukhari & Muslim).

Mohammad Najeeb Qasmi has been working in Riyadh since 1999.

 

 

Author of following books:

 

Hayya Alas SalahOn the topic of prayer (Namaz) (168 Pages), namaz smallFirst Edition was published in 2005, Second in 2007 & third in 2011.

 

 

 

haj mabr small

Hajj-e-Mabroor: On the topic of Haj (148 Pages), First Edition was published in 2005, Second in 2007 & Third in 2011.

 

 

 

 

cover-mazameen-Kitab2013Islahi Mazaamin: On various topics (396 pages), First Edition was published in 2011.

 

 

 

Mukhtasar Hajj Mabroor CoveMukhtasar Hajj-e-Mabroor: Mukhtasar Hajj-e-Mabroor (Pocket Size book) is the summarized version of Hajj-e-Mabroor.

 

 

 

Tohfae Ramazan CoverTohfae Ramazanul Mubarak: Tohfae Ramazaul Mubarak deals with benefits, issues/questions, and rulings of fasting, Suhoor, Iftar, Taraweeh, Zakat, I’tekaf, Layla-tul-Qadr, Sadqa-e-Fitr, Eid-ul-Fitr, and the six fasts of Shawwal according to the Quran and Hadith.

 

 

 

cd haj smallA Video “How to perform Umrah”: 30 minutes video “How to perform Umrah” describe the method of Umrah.

 

 

 

Quran Program CoverMaloomate Quran: This book has been issued on the occasion of Shaza Parveen’ Khatme Quran on 09-08-2013 comprising 6 articles regarding Quran from different Ulamas.

 

 

 

Umrah Ka Tariqah CoverUmrah Ka Tariqh: The method of Umrah in brief

 

 

 

 

Sanad of Hadeeth:

Before describing Sanad of Hadeeth, it is important to know what does the Sanad mean. Sanad is a specific term of Hadith which simply means description of the link that connects the man who narrates the Hadith with the Prophet (صلى الله عليه وسلم). It shows to the readers the way Hadith has been narrated.

All the Ahadith have not come down through single link. Some Ahadith have been recorded by a scholar and other Ahadith by another scholar, that is why the Silsila of Ahadith is much larger. But in this brief introduction of Sanad it is not possible to mention all the Silsila-e-Sanad of Hadeeth. So, as an example we will prefer to mention the Sanad of one book ofHadeeth “Saheeh Al-Bukhari”.

The following Sanad is of the most authentic book of Hadith which is “Sahee Al-Bukhari”

 

محمد نجيب محمد شعيب القاسمي

الشيخ نصير أحمد خان (المجلد الأول للبخاري)

الشيخ عبد الحق الأعظمي (المجلد الثاني للبخاري)

شيخ الإسلام حسين أحمد المدني رحمة الله عليه

شيخ الهند محمود الحسن الديوبندي رحمة الله عليه

الشيخ محمد قاسم النانوتوي رحمة الله عليه

الشاه عبد الغني المجددي رحمة الله عليه

الشاه محمد إسحاق الدهلوي رحمة الله عليه

الشاه عبد العزيز المحدث الدهلوي رحمة الله عليه

مسند الهند محمد أحمد الشهير بولي الله بن عبد الرحيم الفلتي ثم الدهلوي رحمة الله عليه

الشيخ أبو طاهر محمد بن إبراهيم المدني رحمة الله عليه

الشيخ إبراهيم الكردي رحمة الله عليه

الشيخ أحمد القشاشي رحمة الله عليه

الشيخ أبو المواهب أحمد بن عبد القدوس الشناوي رحمة الله عليه

الشيخ شمس الدين محمد بن أحمد الرملي رحمة الله عليه

شيخ الإسلام زين الدين زكريا بن محمد الأنصاري رحمة الله عليه

الشيخ شهاب الدين احمد بن علي بن حجر كناني العسقلاني رحمة الله عليه

الشيخ إبراهيم بن احمد التنوخي رحمة الله عليه

الشيخ أبو العباس أحمد بن أبي طالب الحجار رحمة الله عليه

الشيخ سراج الدين أبو عبد الله الحسين بن المبارك الزبيدي اليمني رحمة الله عليه

الشيخ أبو الوقت عبد الأول بن عيسى بن شعيب السجزي الهروسي رحمة الله عليه

الشيخ أبو الحسن عبد الرحمن بن محمد بن مظفر الداؤدي رحمة الله عليه

الشيخ أبو محمد عبد الله بن احمد السرخسي رحمة الله عليه

الشيخ أبو عبد الله محمد بن يوسف بن مطر بن صالح بن بشر الفربري رحمة الله عليه

الشيخ أبو عبد الله محمد بن إسماعيل بن إبراهيم بن المغيرة بن بردزبة الجعفي اليماني البخاري رحمه الله

.............................. تبع تابعي وتابعي وصحابي ...............................

خاتم الأنبياء والرسل سيدنا محمد مصطفى صلى الله عليه وسلم

اُردو میں تعارف

مولانا محمد نجیب قاسمی کا تعلق سنبھل ضلع مرادآباد (یوپی) کے علمی گھرانے سے ہے، ان کے دادا مشہور ومعروف محدث ، مقرر اور مجاہد آزادی مولانا محمد اسماعیل سنبھلی تھے، جنہوں نے مختلف اداروں میں تقریباً ۱۷ سال بخاری شریف کا درس دیا جبکہ ان کے نانا مفتی مشرف حسین سنبھلی تھے جنہوں نے مختلف اداروں میں افتاء کی ذمہ داری نبھانے کے ساتھ ساتھ بخاری واحادیث کی دیگرکتابیں بھی پڑھائیں.

ابتدائی تعلیم سنبھل میں ہی حاصل کی چنانچہ مڈل اسکول پاس کرنے کے بعد عربی تعلیم کا آغاز کیا۔ دریں اثناء ۱۹۸۶ میں یوپی بورڑ سے ہائی اسکول بھی پاس کیا۔ ۱۹۸۹ میں دارالعلوم دیوبند میں داخلہ لیا۔ دارالعلوم دیوبند کے قیام کے دوران یوپی بورڑ سے انٹرمیڈیٹ (Senior Secondary) کا امتحان Ist Divisionسے پاس کیا۔ ۱۹۹۴ میں دارالعلوم دیوبند سے فراغت حاصل کی۔ دارالعلوم دیوبند سے فراغت کے بعد جامعہ ملیہ اسلامیہ (نیو دہلی) سےBA Arabicکے امتحان میں امتیازی نمبرات سے کامیابی حاصل کی۔ نیزدہلی کے قیام کے دوران جامعہ ملیہ اسلامیہ سے ترجمہ کے دو کورس کئے، بعدہ دہلی یونیورسٹی سے MA(Arabic)کیا۔

سعودی عرب میں حصول روزگار کے ساتھ ساتھ تین کتابیں 1999سے ریاض میں برسرروزگار ہیںحج مبرور ،حی علی الصلاۃ اور اصلاحی مضامین تحریر کیں جن کے مختلف ایڈیشن شائع ہوچکے ہیں،ان کتابوں کےPDFنسخے مختلف Websitesپر موجودہیں

سالوں سے ریاض شہر میں حج تربیتی کیمپ بھی منعقد کررہے ہیں۔ان کا Hajj Orientation Program کافی مقبول ہے

وقتاً فوقتاًمختلف موضوعات پر مضامین انٹرنیٹ پرCirculateکرتے رہتے ہیں۔ یہ مضامین اردو اخبارات میں بھی شائع ہوتے ہیں۔

جامعہ ملیہ اسلامیہ (نیو دہلی) کے شعبہ عربی کی جانب سے مولانا ڈاکٹر محمد نجیب قاسمی کو ’’الجوانب الادبيۃ والبلاغيۃ والجماليۃ فی الحدیث النبوی‘‘ یعنی حدیث کے ادبی وبلاغی وجمالی پہلو پرڈاکٹریٹ کی ڈگری تفویض کی گئی۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ کے وائس چانسلر جناب پروفیسر طلعت احمد صاحب کے بدست جامعہ ملیہ اسلامیہ المنائی ایسوسی ایشن، ریاض کی جانب سے جامعہ کے ۹۴ ویں یوم تاسیس کی مناسبت پر ریاض شہر میں منعقد ہونے والی پروقار تقریب میں ڈاکٹر نجیب قاسمی نے اپنی پی ایچ ڈی کی تکمیل پر میمنٹو حاصل کیا.

ڈاکٹر نجیب قاسمی نے مایہ ناز عربی ادیب جناب ڈاکٹر شفیق احمد خان ندوی سابق صدر شعبہ عربی اور پروفیسر رفیع العماد فینان کی سرپرستی میں عربی زبان میں ۴۸۰ صفحات پر مشتمل اپنا تحقیقی مقالہ پیش کیا

ڈاکٹر نجیب قاسمی نے اپنے پی ایچ ڈی مقالہ میں ذکر کیا ہے کہ شرح حدیث، سند حدیث اور اقسام حدیث پر بہت کام ہوا ہے مگر حدیث کے ادبی پہلو پر کام بہت کم ہوا ہے ، اردو زبان میں تو کوئی قابل قدر کام ابھی تک نہیں ہوسکا ہے۔ ڈاکٹر نجیب قاسمی نے اپنی ریسرچ کے ذریعہ بتایا کہ قرآن کریم کا اعجاز حدیث کے ادبی پہلو پر فوقیت لئے ہوئے ہے مگر قرآن کریم کے بعد احادیث نبویہ کے عظیم علمی ذخیرہ سے نحو وصرف میں استدلال کیا جاتا ہے نیز انہوں نے حدیث نبوی کے ذریعہ عربی زبان پر پڑے اثرات کو دلائل کے ساتھ ذکر کیا۔ موصوف نے روایت الحدیث باللفظ یعنی احادیث قولیہ میں نبی اکرم ﷺ کے الفاظ ہونے پر مدلل بحث فرمائی ہے۔ ڈاکٹر نجیب قاسمی نے اپنے مقالہ میں حضور اکرم ﷺ کے کلام کی خوبیوں کو ذکر فرماکر فصاحت وبلاغت کے پیکر اور ادیب اسلام حضور اکرم ﷺ کے اقوال زریں کا ادبی وعلمی تحلیل کیا جس میں ایمانیات، معاملات، اخلاقیات اور معاشرت سے متعلق حضور اکرم ﷺ کے اقوال کا سب سے پہلے مفہوم ذکر کیا پھر الفاظ کے استعمال کی خوبیوں کو دلائل کے ساتھ ذکر کیا۔ حضور اکرم ﷺ کے جوامع الکلم پر بھی اس تحقیقی مقالہ پر روشنی ڈالی گئی ہے یعنی بڑی بڑی بات کو ادیب عرب محمد ﷺ نے کس طرح مختصر وجامع الفاظ میں بیان کیا ہے۔ ڈاکٹر نجیب قاسمی نے مقالہ کے آخر میں تحریر کیا کہ اس موضوع کے مختلف پہلوؤں پر مزید کام کیا جانا چاہئے کیونکہ حدیث نبوی ایسا علمی ذخیرہ ہے جس سے رہتی دنیا تک موتی نکلتے رہیں گے.